×

Warning

JUser: :_load: Unable to load user with ID: 830

حرکات

February 13, 2014 471

حروف پر آنے والي

علامتوں کي پانچ قسميں ھيں جن ميں سے تين کو حرکات کھا جاتا ھے - زبر - زير - پيش -  جسے عربي ميں فتحہ ،ضمہ ، کسرہ کھتے ھيں - باقي دو ميں ايک "مد" "  ظ“"  اور دوسرے کو" سکون" کھا جاتا ھے -

مد

مد کي دو قسميں ھيں:

1- مد اصلي

2- مد غير اصلي

مد اصلي

وہ مد ھے جس کے بغير واؤ - الف - ي - کي آواز اد ا نھيں کي جا سکتي اور اس کے لئے عليحدہ سے کسي سبب کي ضررت نھيں ھوتي جيسے قال- - قيل -يقول -

ان مثالوںميں الف -ي -واؤ کي آواز پيدا کرنے کے لئے ان حرف کو دو حرکتوں کے برابر کھينچنا ھو گا - واضح رھے کہ مٹھي بند کر کے متوسط رفتار سے ايک انگلي کے کھولنے ميں جتني دير لگتي ھے وہ ايک حرکت کي مقدار ھے -

مد غير اصلي

وہ مد ھے جھاں"  واؤ، الف، ي " کي آواز کو کسي سبب ( ھمزہ يا سکون ) کي وجہ سے مد اصلي کے مقابل زيادہ کھينچ کر ادا کيا جاتا ھے -

مد غير اصلي کي ھمزہ کے اعتبار سے دو قسميں ھيں : 1- واجب متصل 2- جائز متصل

واجب متصل

يہ اس مد کا نام ھے جس ميں مد اور ھمزہ ايک ھي کلمہ کا جز ھوں جيسے: جآء - شئت -سوء کہ ان تينوں مثالوں ميں الف - ي - واؤ - اور ھمزہ ايک ھي کلمہ کا جز ء ھيں - اس مد کے کھينچنے کي مقدار چار سے پانچ حرکات کے برابر ھے -

جائز متصل

وہ مد ھے جو حروف مد سے پھلے کلمہ کے آخر ميں اور ھمزہ دوسرے کلمہ کے شروع ميں واقع ھو ، جيسے "  انا اعطيناک - توبوا" الي اللہ - بني اسرائيل -" اس کي مقدار بھي چار سے پانچ حرکات کے برابر ھے -

مدغير اصلي کي سکون کے اعتبار سے چار قسميں ھيں - 1- مد لازم - 2- مد عارض - 3- مد لين - 4- مد عوض

مد لازم

اس مد کا نام ھے جس ميں واؤ - الف - ي - کے بعد والے ساکن حرف کا سکون لازمي ھو يعني کسي بھي حالت ميں نہ بدل سکتا ھو جيسے  يٰس (يا سين ) حظ“مظ“عظ“سظ“قظ“ (حا- ميم -عين - سين - قاف ) الحاقة  اس کي مقدار چار حرکات کے برابر ھے -

مد عارض

اس مد کا نام ھے جس ميں واؤ -الف -ي - کے بعد والے حرف کو وقف کے سبب ساکن کر ديا گيا ھو جيسے" غفور ، خبير، عقاب، خوف" - مد عارض کو دو ، چار ياچہ حرکتوں کے برابر کھينچنا جائز ھے ليکن چہ کے برابر بھتر ھے -

مد لين

حروف لين کے بعد والا حرف ساکن ھو تو اس پر بھي مد آجائيگا- اگر اس حرف کا سکون لازم ھو تو اسے مد لين لازم کھيں گے جيسے " حمعسق "  -اس مد کي مقدار چار حرکات کے برابر ھے- اگر سکون عارضي ھو تو اسے مد لين عارض کھيں گے جيسے خوف " اس کو دو حرکات کے برابر کھينچ کر پڑھنا چاھئے -

مد عوض

ايسے حرف پر وقف کرنے کي صورت ميں ھوتا ھے جھاں دو زبر ( تنوين ) ھوں جيسے" عليماً - حکيماً "- اس کي مقدار دو حرکتوں کے برابر ھے -

Last modified on Wednesday, 07 May 2014 11:23
Login to post comments