امت شاہ اور اویسی کے درمیان ہوا تھا خفیہ معاہدہ

  • Tuesday, 12 July 2016 18:12
  • Published in قومی
امت شاہ اور اویسی کے درمیان ہوا تھا خفیہ معاہدہ All images are copyrighted to their respective owners.

بہار انتخابات کے وقت امت شاہ اور اویسی کے درمیان ہوا تھا خفیہ معاہدہ: بی جے پی کے سابق ممبر اسمبلی

احمدآباد:(ایجنسی) عام آدمی پارٹی میں شامل ہونے کی تیاری کر رہے بی جے پی کے سابق ممبر اسمبلی يتين اوجھا نے پیر کو دعوی کیا کہ بی جے پی صدر امت شاہ اور ایم آئی ایم صدراسد الدین اویسی کے درمیان بہار اسمبلی انتخابات سے پہلے ریاست کے مسلم اکثریتی شمالی پٹی میں ووٹروں کا پولرائزیشن کرنے کے لئے ایک میٹنگ کے دوران سمجھوتہ ہوا تھا۔ اس الزام کو لے کرعام آدمی پارٹی اور بی جے پی کے درمیان الزام تراشی کا دور شروع ہو گیا۔

بی جے پی کی گجرات یونٹ کے میڈیا انچارج نے اس الزام کو ’’ میڈیا کی توجہ اپنی طرف مبذول کرنے کی ایک کوشش ‘‘ قرار دیتے ہوئے مسترد کر دیا۔ وہیں عام آدمی پارٹی لیڈر اور دہلی کے وزیر اعلی اروند کیجریوال نے ٹویٹ کیا، ’’ اگر یہ صحیح ہے تو یہ بی جے پی، مودی اور شاہ کا اصلی چہرہ بے نقاب کرتا ہے‘‘۔

اوجھا نے گزشتہ چار جولائی کو کیجریوال کو بھیجے گئے ایک خط میں دعوی کیا ہے کہ۱۵؍ ستمبر،۲۰۱۵ء کو امیت شاہ کی رہائش گاہ پر صبح ہوئی میٹنگ میں وہ خود بھی موجود تھے۔ اوجھا نے دعوی کیا کہ میٹنگ میں یہ طے ہوا تھا کہ ’’ اویسی زہریلی فرقہ وارانہ تقریر دیں گے اور یہ تقریر امت شاہ لکھیں گے۔ ‘‘ انہوں نے اگرچہ یہ واضح نہیں کیا کہ میٹنگ شاہ کی گجرات رہائش گاہ پر ہوئی تھی یا دہلی میں ہوئی تھی۔

انہوں نے مزید الزام لگایا کہ حیدرآباد سے پکڑے گئے آئی ایس کے مشتبہ دہشت گردوں کو قانونی مدد دینے کا اویسی کا تازہ بیان بھی اسی حکمت عملی کا حصہ ظاہر ہوتا ہے۔

Rate this item
(0 votes)

Related items