این آئی اے نے ذاکر نایک کی تقریروں کی جانچ شروع کی

این آئی اے نے ذاکر نایک کی تقریروں کی جانچ  شروع کی All images are copyrighted to their respective owners.

ان کے پاس ذاکر نایک کو لے کر کسی طرح کا ٹھوس ثبوت نہیں ہے

نئی دہلی:(ایجنسی)ڈھاکہ دہشت گردانہ حملے کے سازش کاروں کے ڈاکٹر ذاکر نایک سے ترغیب پانے کی خبروں کے بعد عالمی شہرت یافتہ ڈاکٹر ذاکر نایک  تنازعات کی زد میں آ گئے ہیں۔ ممبئی پولیس اور این آئی اے نے ممبئی کے ڈاکٹر نایک کی تقریروں کی جانچ شروع کر دی ہے۔

 اب ایجنسیاں ذاکر نایک کے ویڈیو کی صحیح طریقے سے جانچ کر رہی ہیں اور۱۱؍ جولائی کو ان کے ہندوستان لوٹنے پر ان سے رابطہ کیا جائے گا۔ ایجنسیاں خاص طور سے اس ویڈیو کو اس نقطہ نظر سے بھی جانچ رہی ہیں کہ کہیں نایک نے خلیفہ پر کوئی بات کی تھی؟ یا پھر انہوں نے کسی دہشت گرد تنظیم کی تعریف کی تھی؟

اے ٹی ایس اور این آئی اے نے بتایا کہ ابھی ان کے پاس ذاکر نایک کو لے کر کسی طرح کا ٹھوس ثبوت نہیں ہے اور ابھی نایک کی تقاریر کی جانچ کی جا رہی ہے۔ اس درمیان ذاکر نایک کے اسلامک ریسرچ فاؤنڈیشن کے ایڈمنسٹریشن منیجر منظور شیخ نے بتایا کہ مجھے اوپر سے حکم ملا ہے کہ ابھی کسی طرح کی پریس کانفرنس نہیں کرنی ہے۔ بنگلہ دیش کے حملہ آوروں کے سوال پر شیخ نے کہا کہ قرآن میں لکھا ہے کہ کسی بے گناہ کو مار نہیں سکتے۔

وزیر داخلہ کرن رجيجو نے کہا کہ ذاکر نایک کی تقریر ہمارے لئے باعث تشویش ہے۔ ہماری ایجنسیاں اس پر کام کر رہی ہیں۔ آئی بی کی اس پر نظر ہے لیکن ایک وزیر کے طور پر میں اس بات پر کوئی رد عمل نہیں دوں گا کہ کیا کارروائی کی جا رہی ہے۔

ذاکر نائیک کے بارے میں بتایا گیا ہے کہ وہ اس وقت ہندوستان میں نہیں ہیں۔ وہ مکہ گئے ہیں۔ وہ ۱۱؍جولائی کو ہندوستان واپس آئیں گے اور پورے معاملے پر ۱۲؍جولائی کو پریس کانفرنس کریں گے۔ ذاکر نائیک کا پیس ٹی وی ملک سے باہر ہی اپ لنک ہے۔ ہندوستان میں اسے ڈاؤن لنک کیا گیا ہے۔ اطلاعات اور نشریات کی وزارت نے پیس ٹی وی کو لائسنس نہیں دیا ہے اس لئے وہ اب ٹی وی پر بھی نہیں ہیں۔

اس درمیان ممبئی پولیس نے نائیک کے فاؤنڈیشن سے وابستہ لوگوں سے پوچھ گچھ شروع کر دی ہے۔

Rate this item
(0 votes)
  • Last modified on Wednesday, 06 July 2016 23:21
  • font size

Related items