کرکٹ اولمپک کا حصہ بن سکتا ہے!

  • Friday, 01 July 2016 19:39
  • Published in کھیل
کرکٹ اولمپک کا حصہ بن سکتا ہے! All images are copyrighted to their respective owners.

انگلینڈ سمیت دنیا کے کچھ اہم قومی کرکٹ ٹیموں کی گنجائش نہیں نکل پائے گی

ایڈن برگ: (ایجنسی)اسپورٹس شیدائیوں کی ایک دیرینہ آرازو کی تقریباً تکمیل ہونے جارہی ہے یعنی کرکٹ کی اولمپک میں شرکت کے امکانات روشن نظر آنے لگے ہیں۔ بظاہر یہ اسی وقت ممکن ہے جب روم ۲۰۲۴ء میں اولمپک کی بولی جیت جائے۔ ایسی صورت میں کرکٹ بھی اولمپک کا حصہ بن سکتا ہے۔

 اولمپک ۲۰۲۴ء  کیلئے بولی لگانے والوں میں پیرس، لاس اینجلس اور بودا پیسٹ کے ساتھ ساتھ روم بھی شامل ہے اور نئے ضابطوں کے مطابق بولی جیتنے والے کو پاس پانچ کھیلوں کا اضافہ کرنے کی حق حاصل ہوگا۔

اس پس منظر میں فیڈریزیون کرکٹ اٹالیانہ(ایف سی آئی) کے صدر سیمون گمبینو نے کہا کہ اگر روم اولمپک کی میزبانی کا شرف حاصل کرنے میں کامیاب رہا تو کرکٹ کو بھی اولمپک کا حصہ بنایا جائے گاشامل کیا جائے گا۔آن لائن میڈیا کے مطابق یہ ایڈن برگ میں ہونے والے آئی سی سی کے سالانہ اجلاس میں ان امکانات کے در کھلے ہیں۔

بالفرض روم کو میزبامنی مل گئی اور کرکٹ اولمپک میں شامل کر لیا گیا تو اس کے مقابلے بولوگنا میں کرائے جا سکتے ہیں جہاں ورلڈ کرکٹ لیگ ڈویژن فور کے میچز  ہوئے تھے۔ ٹرف پچ کا مسئلہ بھی سامنے آئے گا۔نیز یہ کہ ابھی یہ واضح نہیں کہ یہ مقابلے یک روزہ ہوں گے یا ٹوئنٹی ٹوئنٹی۔

اگر کرکٹ مقابلے میں۱۶؍ کی جگہ اولمپک کے ضابطوں کے مطابق ۱۲؍ ٹیمیں شریک رہیں تو ان میں یورپ سے تین، ایشیا سے تین، دو یا تین امریکہ اور کیریبییائی ملکوں سے اور دو یا تین جنوبی بحرالکاہل کی ٹیمیں ہی شامل ہو سکیں گی۔انگلینڈ سمیت دنیا کے کچھ اہم قومی کرکٹ ٹیموں کی گنجائش نہیں نکل پائے گی۔

Rate this item
(0 votes)

Related items