شارک مچھلی کا انوکھا شکار

  • Monday, 16 May 2016 19:43
  • Published in دلچسپ
شارک مچھلی کا انوکھا شکار All images are copyrighted to their respective owners.

'ڈاکٹر، مدد کریں ... مجھے شارک نے کاٹا ہے، اور وہ اب بھی میری بازو سے چپکی ہے ..

میامی:(ایجنسی) امریکہ کے فلوریڈا میں بنے ایک ہسپتال میں اتوار کو ایک منفرد خواتین مریض پہنچی جسے شارک مچھلی نے کاٹا تھا، لیکن مقامی میڈیا کے مطابق، اس مریض میں منفرد بات یہ تھی کہ اسے کاٹنے والی شارک مچھلی تب تک بھی اس کی بازو سے چپکی ہوئی تھی ...

پام بیچ پوسٹ (Palm Beach Post) کے مطابق، تقریبا دو فٹ (۶۱؍ سینٹی میٹر) طویل چھوٹی سی نرس شارک (Nurse Shark) کو عورت پر حملہ کرنے کے فورا بعد سمندر پر گھومنے والے شخص نے عورت کو باہر نکال لیا ساتھ ساتھ شارک مچھلی بھی آگئی۔شارک نے اپنے دانت اس عورت کے بازو پر اتنی سختی سے گاڑے تھے کی وہ نکال نہیں پائے۔

سٹی فائر ریسکیو ترجمان باب لےمنس نے اخبار کو بتایا کہ ساحلی شہر بوکا راٹون میں اس۲۳؍ سالہ خاتون کو ساحل سمندر پر نہاتے وقت شارک نے کاٹا تھا۔

لےمنس نے بتایا کہ عورت کو فوری طور پر شہر میں ہی بنے علاقائی ہسپتال لے جایا گیا، اور اس وقت بھی شارک اس دائیں بازو سے چپکی ہوئی تھی۔

اوقیانوس کے ساحل ریسکیو کیپٹن کلنٹ ٹریسی (Ocean Rescue Captain Clint Tracy) نے ساؤتھ فلوریڈاسنٹینل (South Florida Sun-Sentinel) کو بتایا، ’میں نے کبھی بھی ایسا کچھ پہلے نہیں دیکھا ... کبھی ایسی کسی واقعہ کے بارے میں سنا تک نہیں ...‘

فلوریڈا میں بحر اوقیانوس کے ساحل پر عام پائی جانے والی نرس شارک تقریبا۱۰؍ فٹ (تین میٹر سے کچھ زیادہ) تک طویل ہو سکتی ہے، اور اس عام طور پر خاموش مخلوق سمجھا جاتا ہے۔

ایک گواہ نے کو بتایا کہ حملہ کرنے سے پہلے کچھ تیراک شارک کو پریشان کر رہے تھے، اور اس دم سے پکڑ رہے تھے ۔

کلنٹ ٹریسی نے بتایا کہ شارک کا شکار ہوئی خواتین شروع میں جب سرخ ریف پارک (Red Reef Park beach) پر بنے لائف گارڈ اسٹیشن پر مدد کے لئے پہنچی، تب تک کافی پرسکون تھی ... اس کے ساتھ ایک مرد ساتھی بھی تھا جو شارک کو تھامے ہوئے تھا، اور اس وقت زیادہ خون نظر نہیں آرہا تھا۔

گواہ شلومو جیکب (Shlomo Jacob) نے سنٹینل کو بتایا،’شارک مچھلی سانس بھی نہیں لے پا رہی تھی، لیکن اس کا (خواتین کی) ہاتھ نہیں چھوڑ رہی تھی‘۔

وقت گزرتا گیا، اور جیسے جیسے بھیڑ اکٹھی ہوتی گئی، خواتین پریشان ہوتی چلی گئی، اور جب پیرامیڈك وہاں پہنچے، تو انہوں نے عورت کو آکسیجن دی۔

ٹریسی نے اخبار کو معلومات دی کہ اس کے بعد پیرامیڈك عملے نے خواتین کے ہاتھ اور شارک کو سہارا دینے کے لئے بورڈ لگایا، اور پھر سٹریچر پر انہیں ہسپتال لے گئے ۔

شارک ریسرچ انسٹی ٹیوٹ (Shark Research Institute) کے مطابق، نرس شارک نشاچر مخلوق (صرف رات میں سرگرم ہونے والے) ہوتی ہے، اور دن کے وقت عام طور پر ان کے ساحلی علاقوں میں سمندر کی تہ پر غیر فعال پڑے دیکھا جا سکتا ہے ۔

نرس شارک مچھلیاں چھوٹی مچھلیوں اور جھیگنوں، سكوڈ ہی وغیرہ کو کھا کر گذارا کرتی ہیں، اور انسانی گوشت نہیں کھاتی ہیں۔ زیادہ تر بالغ نرس شارک۹؍ فٹ (تین میٹر) سے زیادہ طویل نہیں ہوتیں، لیکن انہیں۱۴؍ فٹ (۳ء۴؍ میٹر) تک کی لمبائی پاتے بھی دیکھا گیا ہے ۔

Rate this item
(0 votes)