مستقبل میں انسان پرندے کی طرح اڑ سکتا ہے

مستقبل میں انسان پرندے کی طرح اڑ سکتا ہے All images are copyrighted to their respective owners.

فرانسیسی شہری نے اڑن تختے پر۲؍ ہزار میٹر سے زائد سفر کرکے عالمی ریکارڈ قائم کردیا

پیرس:(ایجنسی)فرانس کے مؤجد نے اپنے تیار کردہ جیٹ ہوور بورڈ یا اْڑن تختے پر ۲؍ہزار میٹر کا فاصلہ طے کرکے ایک نیا ریکارڈ قائم کیا ہے جسے کسی اْڑن تختے پر طویل ترین فاصلے فاصلہ قرار دیا جاسکتا ہے۔

۳۷؍ سالہ فرینکی زپاٹا اس کے چیمپیئن بھی ہیں اور انہوں نے زمین سے ۵۰؍میٹر بلند ہوکر ہفتے کے روز فرانس کے ساحلی شہر سوسے لے پِنز سے اپنی اْڑان بھری اور انہیں گنیز بک آف ورلڈ ریکارڈ کی جانب سے اس کا سرٹیفکٹ بھی دیدیا گیا ہے۔

انہوں نے ایک ماہ قبل ایسا ہوور بورڈ بنایا تھا جو ۱۵۰؍کلومیٹر فی گھنٹے کی رفتار سے پرواز کرتا تھا۔

 اس سے قبل انہوں نے واٹر جیٹ پیک کے ذریعے ایک منٹ میں ۲۶؍قلابازیاں کھاکر ایک ریکارڈ قائم کیا تھا۔

 فرینی زپاٹا نے اسے فلائی بورڈ ایئر کا نام دیا ہے اور ان کا دعویٰ ہے کہ یہ تختہ کسی تار یا رسی کے بغیر ۱۰؍ہزار فٹ کی بلندی پر بھی جاسکتا ہے لیکن فی الحال بورڈ صرف ۱۰؍منٹ تک پرواز کرسکتا ہے۔

ویڈیو میں ایک جوائے اسٹک دیکھی جاسکتی ہے جس سے معلوم ہوتا ہے کہ شاید یہ کوئی الیکٹرک وائر ہے لیکن مؤجد کا اصرار ہے کہ جیٹ قوت کا نظام ہوور بورڈ کے اندر بنایا گیا ہے۔

 فرینکی کے مطابق اس کی تیار میں۴؍سال کی محنت شامل ہیں اور یہ یہ ایجاد جلد لوگوں کے لیے بھی پیش کی جائے گی۔

Rate this item
(0 votes)