ذاکر نائیک کو’شیطان‘ کہنے پر سیاستدان کے دفتر پر حملہ

ذاکر نائیک کو’شیطان‘ کہنے پر  سیاستدان کے دفتر پر حملہ All images are copyrighted to their respective owners.

راماسیمی نے بہر حال ذاکر نائیک پر الزام لگایا کہ وہ اپنی تقاریر کے ذریعے دیگر عقائد سے متعلق نفرت پھیلارہے ہیں

کوالا لمپور:(ایجنسی) مبلغ ڈاکٹر ذاکر نائیک کو’شیطان‘ کہنے پر ملائشیا میں ایک سینیئر سیاستدان کے دفتر پر پیٹرول بم سے حملہ کیا گیا۔ یہ واقعہ ریاست پنانگ میں پیش آیا جس میں کوئی جانی یا مالی نقصان نہیں ہوا۔

سرکاری حکام کے حوالے سے خبر دی گئی ہے کہ ریاست کے نائب وزیراعلیٰ پی راماسیمی کے دفتر پر علی الصبح یہ حملہ ہوا۔

راماسیمی کا کہنا ہے کہ یہ حملہ فیس بک پر ڈاکٹر ذاکر نائیک کے حوالے سے ایک پوسٹ کا نتیجہ ہوسکتا ہے جو سلام اور مسلمانوں کے خلاف نہیں تھا البتہ انہوں نے ذاکر نائیک کو شیطان کہہ دیا تھا۔ جس پربعد ازاں انہوں نے افسوس کا اظہار کیا اور کہا کہ بعد میں انہوں نے اس لفظ کو حذف کردیا تھا۔

راماسیمی نے بہر حال ذاکر نائیک پر الزام لگایا کہ وہ اپنی تقاریر کے ذریعے دیگر عقائد سے متعلق نفرت پھیلارہے ہیں۔

بعد ازاں راماسیمی نے اپنے بیان میں ذاکر نائیک کے لیے لفظ ’شیطان‘ استعمال کرنے پر افسوس کا اظہار کیا، جس سے مسلمانوں کے جذبات مجروح ہوئے اور کہا کہ اس لفظ کو بعد میں حذف کردیا گیا تھا۔

خبروں کے مطابق اتوار کو پولیس نے جنوبی ریاست مالاکا میں اقلیتی برادری کی شکایت پر ایک یونیورسٹی میں ڈاکٹر ذاکر نائیک کو لیکچر دینے سے روک دیا تھا۔

Rate this item
(0 votes)

Related items